Wednesday, July 25, 2018

ریاض: غیر مُلکیوں کے لیے پیشے کی تبدیلی کے حوالے سے اہم خبر

Tags

سعودی وزارت محنت و سماجی بہبود نے واضح کیا ہے کہ ایسے پیشے جن کی 100فیصد سعودائزیشن کا فیصلہ ہو چکا ہے اُن کے لیے غیر مُلکیوں کی جانب سے پیشے کی تبدیلی کی درخواست رد کر دی جائے گی۔ مثلًا زیورات فروشی‘ ٹورسٹ گائیڈ‘ موبائل فروشی اور اس طرح کے سعودیوں کے لیے مخصوص پیشوں کے لیے غیر مُلکی درخواست دینے کے اہل نہیں ہیں۔ ڈاکٹری‘ انجینئرنگ اور چارٹرڈ اکاؤنٹنٹ کے پیشوں کے لیے آن لائن درخواست کی سہولت موجود نہیں ہے۔ جبکہ جو غیر مُلکی ورکر اپنے سابقہ پیشے کو چھوڑ کر اُس کی جگہ ڈاکٹر‘ انجینئر یا چارٹرڈ اکاؤنٹنٹ کا پیشہ اختیار کرنا چاہتے ہیں‘ اُنہیں اس کے لیے مکتب العمل سے رجوع کرنا ہو گا۔ اگر کوئی شخص ڈاکٹری کا پیشہ اپنانا چاہ رہا ہے تو اُسے اپنی طبی دستاویزات و اسناد مکتب العمل میں جمع کروانا ہو گی جو سعودی ہیلتھ اسپیشلائزیشن کونسل کے ذریعے مطلوبہ شخص کی طبی اہلیت کا جائزہ لینے کے بعد فیصلہ کرے گی کہ کیا یہ شخص میڈیکل کے شعبے میں خدمات انجام دینے کا اہل ہے یا نہیں۔ اسی طرح انجینئر کے عہدے کو اختیار کرنے کے لیے سعودی انجینئرز کونسل جبکہ چارٹرڈ اکاؤنٹنٹ کے لیے سعودی چارٹرڈ اکاؤنٹس کونسل حتمی فیصلہ دے گی۔ اگر متعلقہ پیشے کے لیے سعودی افراد موجود ہوں تو پھر ایسی درخواست پر غور نہیں کیا جائے گا۔ پیشے میں ترمیم کے خواہش مند پہلے متعلقہ ادارے کے آن لائن اکاؤنٹ پر جا کر وہاں "پیشے میں تبدیلی(تغییر المھنہ)پر کلِک کریں گے‘، اس کے بعدوہ اپنے سعودی شناختی کارڈ نمبر کا اندراج کریں گے۔ جس کے بعد مطلوبہ پیشے کی نشاندہی کرنا ہو گی۔ اس کے بعد مطلوبہ پیشے والا بٹن دبا کر درخواست بھیجنا ہو گی۔ وزارت محنت کی ویب سائٹ پر جن پیشوں کو اختیار کرنا ممکن ہے اُن میں سینما سے متعلق پیشے مثلاًفلمی فوٹوگرافر‘ فوٹوگرافر‘ فلم ڈائریکٹر‘ پروڈکشن ڈائریکٹر‘ ریڈیو ڈائریکٹر وغیرہ قابلِ ذکر ہیں۔ وزارت کے ترجمان کے مطابق اس سہولت کے باعث سعودی لیبر مارکیٹ میں استحکام آئے گا اور یہ پہلے سے زیادہ منظم بنیادوں پر کام کرے گی۔ جس کے باعث معیشت میں مزید ترقی واقع ہو گی


EmoticonEmoticon